Hide Button

سیمی ٹِپٹ منشٹریز مندرجہ ذیل زبانوں میں مواد مہیا کرتی ہے:۔

English  |  中文  |  فارسی(Farsi)  |  हिन्दी(Hindi)

Português  |  ਪੰਜਾਬੀ(Punjabi)  |  Român

Русский  |  Español  |  தமிழ்(Tamil)  |  اردو(Urdu)

news

ایس ٹی ایم کی خدمت کے چالیس سال مکمل

Sammy & Texپاسٹر ڈیوڈ نے اَپنے دوستوں اور سیمی ٹپٹ منسٹری کے خدمت گزار ساتھیوں سے کہا کہ ‘‘اگر رویا سے زیادہ آپ کی یاد داشت کام کرتی ہے توپھر آپ اَپنا آخری باب لکھ رہے ہوں گے’’۔اِنڈیانا کے پاسبان اورایس ٹی ایم کے بورڈ ممبر بات کو جاری رکھے رہے ‘‘لیکن آپ میں سے وُہ جو سیمی ٹپٹ کو جانتے ہیں وُہ یہ بھی جانتے ہیں کہ اُن کی یاد داشت بہت ہے لیکن اِس سے بھی زیادہ رویائیں ہیں’’۔ سیمی ٹپٹ منسٹریز کے چالیس سال مکمل ہونے پرپانچ ممالک سے سیمی ٹپٹ منسٹریزاور پندرہ ریاستوں کے دوستوں نے ماضی کی گواہیاں اور مستقبل کے بارے میں باتیں سُنی۔

Jerry Jenkinsجیری بی جینکنز جو بہت ہی زیادہ بکنے والی سلسلہ وار کتاب‘‘پیچھے رہ گئے’’کے مصنف ہیں گویا سارے پروگراموں کی صدارت کی۔اُنہوں نے فرمایا کہ اُن کی پہلی کتاب سیمی ٹپٹ ہی کی داستانِ حیات تھی۔جب دونوں نے مِل کر ایک کتاب بنام ‘‘خُدا کی محبت برسرِ پیکار’’لکھی تو سیمی کی عمر پچیس سال جبکہ جینکنز کی تیئیس سال تھی۔بعد میں ایک وڈیو کے ذریعہ سے بتایا گیا کہ اِس خدمت کا آغاز کیسے ہوا۔

سیمی ٹپٹ مانروئے لوزیانہ کی ایک چھوٹی سی کلیسیا میں ایک یوتھ میٹنگ چلاتے تھے کہ بیداری کی ایک لہراس کلیسیا کوآ لیتی ہے۔ سات نوجوان جن میں سیمی ٹپٹ اور ٹیکس بھی شامل تھے فیصلہ کیا کہ سارے امریکہ میں جا کر اِس بات کا اعلان کریں گے کہ امریکی لوگو! خُدا کی طرف رجوع لائو۔ چنانچہ اُنہوں نے ایک ہاتھ گاڑی لی جس میں بہت سی بائبلیں ڈالیں اور جب راستے میں کوئی اُنہیں مِلتا تو اُس کو یہ بائبل دیتے تھے۔ جب اُنہوںنے لوگوں کو دعوت دی کہ وُہ خُدا کی طرف رجوع لائیں اور سارے ملک میں یونیورسٹیوں میں جا کر کلام سُنایا تواِس کے نتیجے میںوُہ سارے ملک میں انقلاب لایا۔

نوجون لوگوں کو‘‘مانروسیون’’ کے نام سے یاد کیا جاتارہا۔اُنیس سوسترمیں جب یہ سفر پورا ہوا اُس وقت سے وُ ہ یوں اکٹھے نہیں ہوئے تھے۔ تاہم اُن میں سے چھ اِس خوشی کے وقت موجود تھےاور جینکنز نے اس جماعت کا انٹر ویو بھی لیا۔

Kanveeایس ٹی ایم کی مستقبل کے بارے میں رویا پر روشنی ڈالنے سے پیشتر بین الاقوامی طور پر ایس ٹی ایم کی خدمات سے متعلق ایک وڈیو بھی دِکھائی گئی۔ لائبیریا کےکینوی گینز جو ایک معروف مسیحی پرستار ہیں اُنہوں نے اِس عظیم انٹر ویو سے پہلے ایک گیت گایا۔ یہ اِنٹر ویو پاسٹر این برخت نے لیا۔ ڈیو ٹپٹ نے اِس وقت کے لائبیریا کے بارے میں بات کی اور اٹرنل کانسپٹس اورایس ٹی ایم کے باہم مِل کرخدمت کرنے پر بات کی۔ ڈیو ٹپٹ نے یہ بھی بتایا کہ ایس ٹی ایم اورای سی مِل کرنسلِ نو کو کیسے مبشروں کو اور نوجوانوں کو بشارتی خدمت کیلئے تربیت دینگے ۔ ایک برازیلی پاسبان ٹارکیو ڈیسوزا نے کہا کہ ہم برازیلی بھی ایس ٹی ایم کے ساتھ مِل کر برازیل تک رسائی کرنے میں سرگرمِ عمل ہوں گے، بیداری کا پیغام پھیلائیں گے اور ملک میںمبشروں کی ایک نئی نسل قائم کریں گے۔ وی جی وجیے کمار نے بھی ہندوستان کیلئے ایسی ہی رویا کے بارے سُنا۔

سیمی ٹپٹ اُس رویا کے بارے میںآخری بات کرنے والے ہوئے جو خُد انے اُنہیں مستقبل کیلئے دے رکھی تھی۔

رویا کا اختصار ذیل میں پیش کیا جا رہا ہے۔

مبشروں کا دیئے سے دیا جلانا

١۔ دُنیا کے ایسے پانچ علاقوں کی شناخت کریں جو سیمی ٹپٹ منسٹریز کے بارے میں آگاہ ہوں۔
٢۔ اِن مبشروں کی تین سال تک تربیت کی جائے تاکہ وُہ بشارت دے سکیں۔
٣۔ اِن تین سالوں کے دوران یہ مبشر حضرات پانچ اور مبشروں کو تربیت دیں۔
٤۔ اگلے سات سالوں کے دوران آپ کے ہاں دو سو پچاس مبشر ہوں گے جو سالانہ ایک لاکھ سے زائد لوگوں تک خوشخبری پہنچا رہے ہوں گے۔

بیک وقت مختلف خدمات میں سرگرمِ عمل ہونا

گُزرے چالیس سالوں میں سیمی ٹپٹ منسٹریز نے جو مختلف خدمات سرانجام دی ہیں اُن سب کو مِلا کر کرنا تاکہ مزید گہرا اور پائیدار کام ہو پائے۔

٭ --- دُنیا بھر کے پانچ برِاعظموں میں بشارتی خدمات کو جاری رکھنا اور پاسبانوں اور رہنمائوں کیلئے سیمینارز کرنا۔
٭ --- دُنیا کے پانچ براعظموں میں خاص مبشروں کو تربیت دینا
٭ --- ویب سائٹ کو پانچوںبرِاعظموں کی بڑی زبانوں نیں ترجمہ کرنا تاکہ مبشر حضرات کی بہتر طور پر تربیت ہو سکے۔
٭ --- ہر براعظم یں ایک ٹیوی اسٹیشن قائم کرنا تاکہ مبشروں کی درست طور پر تربیت کی جا سکے۔
٭ --- ہربرِ اعظم میں ایسی بیداری کی میٹنگز کرنا کہ اُنہیں ٹیلی ویژن پر بھی براہِ راست دِکھایا جائے۔

امریکہ کو اِپنی لپیٹ میں لے لینا

١۔ ٢٠١١کے موسمِ بہار میں سیمی ٹپٹ کی ایک نئی کتاب ‘‘دی ریس’’ کی اشاعت کرنا۔یہ کتاب قاری کیلئے شخصی بیداری کا سبب ہو گی لیکن بڑے عجیب طریقے سے ایک دوڑ میں دوڑنے والے کی نظر سے تحریر کی گئی جیسا کہ کتابِ مُقدس میں ذکر ہے۔
٢۔ شمالی امریکہ میں بیداری سے متعلق مسلسل سیمینار جاری رکھنا۔
٣۔ لوزیانہ کالج میں روحانی سوج بوجھ کے حوالے سے ایک سینٹر کے قیام میں مدد کرنا۔

مزید تصاویر کیلئے یہاں کلِک کریں