Hide Button

سیمی ٹِپٹ منشٹریز مندرجہ ذیل زبانوں میں مواد مہیا کرتی ہے:۔

English  |  中文  |  فارسی(Farsi)  |  हिन्दी(Hindi)

Português  |  ਪੰਜਾਬੀ(Punjabi)  |  Român

Русский  |  Español  |  தமிழ்(Tamil)  |  اردو(Urdu)

devotions
ایل عولام( ابدی خدا)۔

۔«کیا تُو نہیں جانتا؟ کیا تُو نے نہیں سُناکہ خداوند خدای ابدی و تمام زمین کا خالق تھکتا نہیں اور ماندہ نہیں ہوتا؟اُس کی حکمت ادراک سے باہر ہے» (یسعیاہ ۴۰: ۲۸)۔

پاکستان اور بھارت میں خدمت کرنے کے بعدمیں نے اپنی اہلیہ اور اپنے ایک ہمخدمت ساتھی سے کُچھ کہا جس نے اُنہیں حیران کر دیا۔میں نے کہا«میں انتہائی تھک گیا ہوں۔یہ ایسا وقت ہے کہ میں محسوس کرتا ہوں کہ سب کُچھ چھوڑ دوں»۔

میرے دوست نے مجھ پر حیرت کی نگاہ سے دیکھتے ہوئے کہا«کیا آپ کا یہ مطلب ہے کہ اب آپ اپنے ابدی گھر جانے کیلئے تیار ہیں»۔

میں نے کہا«نہیں»۔میرا جِسم تھکا ہوا ہے۔میں تھک گیا ہوں۔جب میں تھک جاتا ہوں تو سوچتا ہوں کہ سب کُچھ چھوڑ دوں۔میں ڈھائی ہفتے تک بہت زبردست خدمت کرتا رہا اور ساتھ ہی روحانی جنگ میں بھی مبتلا رہا۔اس نے مجھے یقینا جسمانی طور پرجذباتی طور پر اور روحانی طور پر نچوڑ دیا۔بلاشک میں نے خدمت کو ترک نہیں کرنا تھا کیوںکہ خدا کی قوّت اور روح میری کمزوریوں سے کہیں زیادہ بڑھ کر ہے۔لیکن ہماری زندگی میں ایسا بھی وقت آتا ہے جب ہم محسوس کرتے ہیں کہ ہم مزید آگے نہیں بڑھ سکتے۔ہمارے بد ن تھک جاتے ہیں۔ہمارے دِل بوجھل ہو جاتے ہیں۔اُس وقت ہمیں بیداری کی ضرورت ہوتی ہے۔اُس وقت خدا کی طرف سے ہمیں تازگی کی ضرورت ہوتی ہے۔

خوشخبری یہ ہے کہ اُس کا نام ایل عولام «ابدی خدا»ہے۔اُس کی نہ تو کوئی ابتدا اور نہ ہی انتہا ہے۔وہ ازل سے ابد تک ہے۔و ہ کائنات کا خالق ہے۔وہ ابدی ہے۔ایل عولام سے متعلق جو منفرد بات ہے وہ یہ کہ یسعیاہ کہتا ہے «وہ تھکتا نہیں اور ماندہ نہیں ہوتا»۔

خدا کو ایل عولام کے طور پر جاننے کے پیچھے دو عظیم سچائیاں ہیں۔پہلی یہ کہ وہ تھکتا نہیں اور دوسری بات یہ کہ وہ ماندہ نہیںہوتا۔جب ہم تھکے ہوئے ہوں تو ہم اُس خدا کے حضور جا سکتے ہیں جو کبھی تنگ نہیں ہوتا۔وہ ہمارے دِلوں میں تازگی کے کنویں بنا دیتا ہے۔جب میں نے اپنی بیوی اور ہمخدمت ساتھی کو ایک بہت دیانتداری پر مبنی جواب سے حیران کر دیا تو میں نے اُن کو یہ بھی بتایا«فکر نہ کریں۔میںا س خدمت سے دست بردار نہیں ہوں گا کیونکہ میں اُسے جانتا ہوں جو کبھی تھکتا نہیں۔وہ مجھے تازہ کریگا اور میرے دِل، روح اور جسم کو تازگی بخشے گا» اور خدا نے ایسا ہی کیا۔

جب ہم خدا کو ایل عولام کے طورپر جان لیتے ہیں۔ تو پھر ہمارے پاس ایک ابدی کنواں ہو جاتا ہے جس سے ہم پی سکتے ہیں۔پھر ہم صحرا میں پیاس سے نہیں مرینگے ۔وہ ہماری ابدی تازگی کا منبع ہے۔لیکن خدا کو ایل عولام کے طور پر جاننے سے متعلق ایک دوسری عظیم سچائی بھی ہے۔اُس کا فہم زمانے کے شروع سے اور اُس کا علم زمانے کی تاریخ کے بعد بھی رہے گا۔محنت کرنے کے سبب سے ہم اکثر تھک جاتے ہیں کیونکہ ہم اپنی محنتوں کے نتائج سے متعلق کُچھ نہیں جانتے ۔لیکن وہ ایل عولام ابدی خدا ہے۔جیسا کہ یسعیاہ نے کہا«اُس کی حکمت ادراک سے باہر ہے»۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ میں اپنے ماضی اور مستقبل کو اُس کے ہاتھوں میں سونپ سکتا ہوں۔وہ سب کُچھ جانتا ہے اور ہر ایک چیز اُس کے قبضے میںہے۔وہ ہمارے حالات کو جانتا ہے۔وہ ہماری ضروریات کو سمجھتا ہے۔اُس نے ہمیں بنایا ہے۔ ہم ازل سے ہی اُس کے ذہن میں تھے اور وہ ہمیں مستقبل میں بھی ابد تک کبھی نہیں بھولے گا۔اُس کے لئے کوئی بھی حالات مشکل نہیں ہیں۔ایسے کوئی بھی حالات نہیں جو اُسے حیرا ن کر دیں۔وہ ایل عولام ہے۔

اگر آپ تھک گئے اورمحسوس کرتے ہیں کہ سب کُچھ چھوڑ دوں تو پھر ایل عولام کے بازووں میں جو ابدی خدا ہے بھاگ کر آ جائیں۔آپ کو وہ مِلے گا جو سب کُچھ جانتا، سمجھتا اور تازہ دم کرتا ہے۔وہ کبھی بھی بوڑھا نہیں ہوتا۔ہماراخداکیسا عظیم ہے۔ایل عولام آپ کو تازہ کریگا۔آپ اُس پر بھروسہ کریں۔