Hide Button

سیمی ٹِپٹ منشٹریز مندرجہ ذیل زبانوں میں مواد مہیا کرتی ہے:۔

English  |  中文  |  فارسی(Farsi)  |  हिन्दी(Hindi)

Português  |  ਪੰਜਾਬੀ(Punjabi)  |  Român

Русский  |  Español  |  தமிழ்(Tamil)  |  اردو(Urdu)

devotions
یہوّاہ سباﺅتھ(لشکروں کا خدا)۔

۔«یہ شخص ہر سال اپنے شہرسے سیلا میں ربّ الافواج کے حضورسجدہ کرنے اور قربانی گزراننے کو جاتاتھا۔اور عیلی کے دونوں بیٹے حفنی اور فینحاس جو خداوند کے کاہن تھے وہیں رہتے تھے» (۱-سیموئیل ۱: ۳)۔

میں جب تک زندہ ہوں اُس پُر نظارہ رات کو کبھی نہیں بھولوں گا۔ہم نے رومانیہ کی سرحد سے ٹرین پر دو گھنٹے کا سفر کیا اور لگتا تھا کہ کُچھ گڑ بڑ ضرور ہے۔ملک میں داخلے کیلئے ٹرین کو بہت مشکل سے صاف ر استہ مِل رہا تھا۔اُس وقت رومانیہ کی حکومت مسیحیوں کے خلاف تھی اور ایمانداروںکو بُری طرح ستاتی تھی۔قصّہ المختصر میں کُچھ سہما ہوا تھا۔

اچانک میری نظر ٹرین کی کھڑکی سے باہر پڑی کہ دس سپاہی ٹرین کی طرف دوڑے چلے آ رہے تھے۔ میں نے اپنے ساتھ بیٹھے ہوئے سے کہا«میرا خیال ہے کہ کوئی مشکل میں ہے»۔میں نہیں جانتا تھا کہ« وہ کوئی »میں ہی ہوں۔سپاہی ٹرین پر سوار ہوئے اور اُن میں سے ایک نے سخت لہجے میں کہا«مسٹرٹِپٹ ! میرے ساتھ آﺅ»۔

وہ میر ی زندگی میں سب سے زیادہ اکیلے پن کی رات تھی۔جب ٹرین اس سرحدی اسٹیشن سے روانہ ہوئی تو میں سپاہیوں سے گھرا ہوا تھا۔میں نہیں جانتا تھا کہ اس کے بعد کیا ہوگا۔میں اپنے آپ سے سوال کرتا کہ «کیا میں قید خانے جاﺅں گا؟»۔میں سوچ رہا تھا کہ شاید مجھے پھر کبھی اس ملک میں واپس آنے کا موقع نہ مِلے۔میرا دِل ٹوٹ گیا کیونکہ میں اپنے رومانی دوستوں سے انتہائی پیار کرتا تھا۔لیکن میں سمجھتا تھا کہ شاید میں اُن کر پھر نہ دیکھوں۔

اُس رات میرے پاس کوئی زمینی طاقت نہیں تھی۔میرے پاس وہاں سے بچ نکلنے کی کوئی ترکیب بھی نہیں تھی۔ میں اُن سپاہیوں کے بیچ میں کھڑا ہوا اور پھر بیٹھ کر رونے لگا۔پھر میں نے آسمان کی طرف ستاروں پر نگاہ کی۔آسمان پکار کر کہنے لگا«عالمِ بالا پر خدا کی تمجید ہو۔عالمِ بالا پر خدا کی تمجید ہو»۔

میں نے بھی مخلوقات کے ساتھ مِل کر خد اکی حمد کرنا شروع کر دی۔میں نے ایمان کے تعلق سے کئی اہم گیت گائے۔جیسے«تیری وفاداری عظیم ہے»۔اور «تُو ہے عظیم»۔اُس رات میں خدا کے حضور اس طور پر آیا کہ وہ یہوّاہ سباﺅتھ لشکروں کا خدا ہے۔وہی کائنات کا افضل ترین حکمران ہے۔وہ آسمانی مقاموں پر فرشتوں کی افواج کا کپتان ہے۔ایسا کوئی نہیں ہے جِس کیساتھ اُس کا موازنہ کیا جا سکے کیونکہ وہی لشکروں کا خداوند ہے۔

وہ شاید سیموئیل نبی تھا جس نے پہلی بارخد اکیلئے یہ لقب استعمال کیا۔جب اسرائیل کی اپنی فوج بہت کم تھی اور وہ اپنے دُشمنوں میں نہایت ہی نحیف اور کمزور تھے جب کہ اُن کے دُشمن زور آور اور بہت زیادہ تھے۔ تب وہ خدا کو یہوّاہ-سباﺅتھ، لشکروں کے خدا کے طور پر پہچان پائے۔جس خدا کی وہ خدمت کرتے تھے وہ اُسے آسمان اور زمین کے تمام لشکروں کے خدا وند کے طور پر پہچاننے لگے۔وہی ہے جِسے ساری افواج(لشکروں) پر اختیار حاصل ہے۔ خدا کا یہ لقب کلامِ مقدّس میں ۲۶۰، مرتبہ پایا جاتا ہے۔

یہ ہمارے لئے بھی اہم ہے کہ ہم بھی اپنی کمزوریوں میں خدا کو یہوّاہ سباﺅتھ کے طور پر پہچانتے ہیں۔یہ ایسا وقت ہوتا ہے جب ہم اپنے آپ کو ادنیٰ اور اپنے دُشمن کو انتہائی مضبوط سمجھتے ہوں اور خدا اپنے آپ کو ہم پر یہوّا ہ سباﺅتھ کے طور پر ظاہر کرے۔یہی وہ لمحات ہوتے ہیں کہ جب ہم اُسے قادرِ مطلق خدا کے طور پر پہچانتے ہیں جو آسمان کے سب لشکروں پر حکمرانی کرتا ہے۔اپنی کمزوریوں کے ایّام میں اُس کے قریب آئیں تو وہ آپ کا زور ہو گا کیونکہ وہ واقعی یہوّاہ سباﺅتھ لشکروں کا ربّ ہے۔

ویسے یہ یہوّاہ سباﺅتھ ہی تھا جس نے میرے لئے دروازے کھولے کہ میں رومانیہ واپس جاﺅں اور اُس کی نجات کی خوشخبری کا اشتہار دوں۔